Treatment of diabetes-pakistan 58

پاکستانی ماہرین نے ذیابیطس کے زخم مندمل کرنے والی انقلابی پٹی تیارکرلی

کامسیٹس یونیورسٹی اسلام آباد کے لاہور کیمپس میں واقع بین الموضوعاتی تحقیقی مرکز برائے حیاتیاتی و طبی مٹیریل ( آئی آر سی بی ایم) نے برطانیہ کی شیفلڈ یونیورسٹی کے تعاون سے اس نئی ٹیکنالوجی کی چوہوں پر کامیاب آزمائش کی ہے اور اس کے نتائج ایک اہم طبی تحقیقی جریدے میں شائع کئے ہیں۔

محققین نے پہلے دنیا بھر میں ذیابیطس کے زخموں پر عام استعمال کی جانے والی ایلجینیٹ ڈریسنگ استعمال کی۔ اس کے بعد ماہرین نے ٹو ڈی آکسی رائبوس (ٹو ڈی ڈی آر) کو اس پٹی کے پھائے پر لگایا۔ واضح رہے کہ ٹو ڈی ڈی آر ایک قسم کی شکر ہے جو زخم بھرنے کی اہلیت رکھتی ہے اور تجربات سے اس کی تصدیق بھی ہوئی ہے۔ ماہرین نے پہلے چوہوں کو شوگر کا مریض بنایا اور اس کے بعد ان میں گہرائی تک زخم لگائے۔ اگلے مرحلے میں ٹوڈی ڈی آر والی ایلجینیٹ پٹی ان کے زخمو پر لگائی گئی۔ اس عمل سے ذیابطیس کے ناسور نہ صرف تیزی سے بھرے بلکہ ان میں خون کی نئی نالیاں بھی بننے لگیں جو زخم مندمل کرنے میں نہایت اہم کردار ادا کرتی ہیں۔ رگوں کے دوبارہ بننے کا یہ عمل طبی زبان میں ’اینجیوجنیسِس‘ کہلاتا ہے۔

ہم جانتے ہیں کہ رگوں ، شریانوں اور وریدوں میں صرف خون ہی نہیں بہتا بلکہ اس کے ساتھ بہت سے ضروری اجزا بھی ایک سے دوسری جگہ پہنچتے ہیں جو زخم مندمل کرنے میں بھی اپنا اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ ذیابیطس کے مریضوں میں خون کی باریک شریانیں بہت بری طرح متاثر ہوتی ہیں اور یہی وجہ ہے شوگر کے مریضوں کے زخم ٹھیک ہونے میں بہت وقت لگاتے ہیں۔ اس کی وجہ اینجیوجنیسِس کا غائب ہونا بھی ہے۔ پھر ایک وقت ایسا بھی آتا ہے کہ زخم ٹھیک ہونے کی بجائے بڑھتا رہتا ہے اور مریض کے عموماً پیروں کو کاٹنا پڑتا ہے۔

شکر سے شوگر کے زخم کا علاج

ماہرین نے اپنی ایجاد کی آزمائش کے لیے ذیابیطس کے مریض چوہوں کے جسم پر 20 ملی میٹر کے زخم لگائے۔ اس کےبعد ان زخموں پر تین اقسام کی پٹیاں لگائی گئیں۔ ایک چوہے کے زخم پر صرف روایتی ایلجنیٹ پٹی باندھی گئی، دوسرے پر 5 فیصد ٹوڈی ڈی آر اور تیسرے پر 10 فیصد ٹو ڈی ڈی آر والے پھائے رکھے گئے۔

اب احتیاط سے ان زخموں کا روزانہ کی بنیاد پر جائزہ لیا گیا اورمرہم پٹی کے پہلے، چوتھے، ساتویں، گیارہوں، چودھویں اور بیسویں روز زخم کی تصاویر لی گئیں۔ تصاویر کا جائزہ لینے کے بعد ماہرین نے ایک اہم بات دریافت کی۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں